ہفتہ رفتہ کراچی اسٹاک مندی دو سے چار121 ،ارب روپے ڈوب گیا

کراچی(بزنس رپورٹر)کراچی سٹاک مارکیٹ پر گزشتہ کار وباری ہفتے کے دوران مندی کے بادل چھائے رہے ، کے ایس ای 100انڈیکس 5بالائی حدوں سے نیچے گرگیا تاہم 33ہزار پوائنٹس کی نفسیاتی حدپربرقرار دیکھا گیا۔ کاروباری اتار چڑھاﺅکے باعث سرمایہ کاروں کے 120ارب روپے ڈوب گئے جس کے باعث سرمائے کا مجموعی حجم 73 کھرب روپے کی سطح سے گھٹ کر 71کھرب روپے رہ گیا۔ مارکیٹ کاروباری ہفتے کے آغاز پر ہی کریش ہو گئی اور 100انڈیکس ایک ہزار سے زائد پوائنٹس گھٹ گیا ،ماہرین کے مطابق ایس ای سی پی کی جانب سے کمیٹی کے قیام کی افواہوں پر سرمایہ کار تذبذب کا شکار دیکھے گئے جبکہ ملک میں جاری سیاسی بے چینی اور آئندہ بجٹ میں کیپیٹل گین ٹیکس میں ڈھائی فیصد اضافے کی اطلاعات پر مارکیٹ کاروباری ہفتے کے 5روز میں سے 3دن مندی سے دوچار رہی ،تاہم آنیوا لی مانیٹری پالیسی میں شرح سود مزید کم ہونے کی امید اور غیر ملکی سرمایہ کاروں کے متحرک ہوجانے کے سبب ا سٹاک مارکیٹ میں2دن تیزی کا رحجان رہا۔گزشتہ پیر تا جمعہ ٹریڈنگ کے دوران کے ایس ای 100انڈیکس ایک موقع پر 33541.59 پوائنٹس کی بلند سطح پر بھی دیکھا گیا تاہم کراچی میں امن و امان کی خراب صورتحال کے باعث سیاسی افق پر غیر یقینی صورتحال سے مارکیٹ میں منافع خوری کا عنصر غالب رہا اور فروخت کے دباﺅکے سبب انڈیکس بلند سطح کو برقرار نہ رکھ سکا۔کراچی سٹاک کی ہفتہ وار رپورٹ کے مطابق پیر تا جمعہ کے دوران کے ایس ای 100انڈیکس میں 491.10پوائنٹس کی کمی ریکارڈ کی گئی جس سے کے ایس ای 100انڈیکس 5بالائی حدوں سے نیچے گر گیا اور 33530.30پوائنٹس سے گھٹ کر 33039.79پوائنٹس پر بند ہوا ،اسی طرح کے ایس ای 30انڈیکس 534.06 پوائنٹس کی کمی سے 21045.79پوائنٹس اور کے ایس ای آل شیئر انڈیکس 23541.55پوائنٹس سے کم ہوکر 23262.65پوائنٹس پر آ گیا۔کاروباری اتار چڑھاﺅ کے باعث رونما ہونے والی مندی کے سبب مارکیٹ کے سرمائے میں ایک کھرب 20ارب 60 کروڑ 2 لاکھ 96 ہزار 410روپے کی کمی ریکارڈ کی گئی جس سے مارکیٹ کا مجموعی سرمایہ 71 کھرب 81 ارب 92 کروڑ 37 لاکھ 80 ہزار151 روپے رہ گیا۔ا سٹاک مارکیٹ میں زیادہ سے زیادہ23کروڑ53لاکھ 15ہزار حصص کا کاروبار ہوا اور ٹریڈنگ ویلیو12ارب روپے ریکارڈ کی گئی جبکہ کم سے کم کاروباری لین دین 15کروڑ46لاکھ26ہزار حصص رہا اور اس دن ٹریڈنگ ویلیو8ارب روپے تک محدود رہی۔مجموعی طور پر1701کمپنیوں کا کاروبار ہوا جن میں سے 753کمپنیوں کے حصص کے بھاﺅ میں اضافہ، 830میں کمی اور118کمپنیوں کے شیئرز کی قیمتوں میں استحکام رہا۔ کاروبارکے لحاظ سے کے الیکٹرک،بائیکو پٹرولیم،پاک الیکٹرون،فوجی سیمنٹ،غنی آٹو موبائل ،ٹی آر جی پاک،جہانگیر صدیقی کمپنی اوربینک آف پنجاب سرفہرست رہے۔

Print Friendly, PDF & Email