کراچی اسٹاک میں مندی چھا گئی ،سرمایہ کاروں کو 10ارب روپے کا نقصان

کراچی (بزنس رپورٹر)کاروباری اتار چڑھاو¿ کے بعد کراچی اسٹاک مارکیٹ پر منگل کے روز بھی مندی کے بادل چھا ئے رہے ،کے ایس ای100انڈیکس 34700پوائنٹس کی سطح چھونے کے بعد 34400پوائنٹس کی کم ترین سطح پر بند ہوا ،مارکیٹ میں مندی کے سبب سرمایہ کاروں کے 10 ارب سے زائد روپے ڈوب گئے ، اس طرح صرف 2 روز کے دوران انڈیکس 34600اور34500پوائنٹس کی دو بالائی حدوں سے نیچے گر گیا اورسرمائے کے حجم میں24ارب سے زائد روپے کی کمی ریکارڈ کی گئی۔کراچی اسٹاک مارکیٹ میں منگل کو کاروبار کے آغاز پر تیزی کا رجحان دیکھا گیا ،توانائی ،سیمنٹ ،بینکنگ اور فرٹیلائزر سیکٹر میں سرمایہ کاری کے باعث انڈیکس 34600اور 34700پوائنٹس کی سطح کو عبور کرتا ہوا 34732پوائنٹس پر جا پہنچا، تاہم سرمائے کے انخلاکے باعث مارکیٹ منفی زون میں داخل ہو گئی اور مندی کا یہ سلسلہ کاروبار کے اختتام پر دیکھا گیا۔منگل کوکاروبار کے اختتام پر کے ایس ای 100 انڈیکس میں 137.41 پوائنٹس کی کمی ہوئی اورکے ایس ای 100 انڈیکس 34570.30 سے گھٹ کر 34432.89 پرآگیا، اسی طرح 65.51 پوائنٹس کی کمی سے کے ایس ای 30انڈیکس 22362.50 پوائنٹس پر اور کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس39پوائنٹس کمی سے 24842.07 پوائنٹس سے کم ہوکر 24802.10 پوائنٹس پر بند ہوا۔مندی کے باعث مارکیٹ کے سرمائے میں 10 ارب 76 کروڑ 8 لاکھ 96 ہزار 598 روپے کی کمی ہوئی جس کے نتیجے میں مارکیٹ کا مجموعی سرمایہ 78 کھرب 39 ارب 46 کروڑ 89 لاکھ 98 ہزار 904 روپے سے کم ہوکر 78 کھرب 28 ارب 70 کروڑ 81 لاکھ 2 ہزار 326 روپے ہوگیا۔منگل کو کراچی اسٹاک مارکیٹ میں 26 کروڑ 50 لاکھ 17 ہزار حصص کاکاروبار ہوااورٹریڈنگ ویلیو 15ارب روپے تک محدود رہی جبکہ پیر کو 26کروڑ27لاکھ45ہزار حصص کا کاروبار ہوا اور ٹریڈنگ ویلیو 17ارب روپے ریکارڈ کی گئی تھی۔ پیر کو کراچی اسٹاک مارکیٹ میں مجموعی طور پر 371 کمپنیوں کاکاروبار ہواجن میں سے 129 کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ ،222میں کمی اور20 کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں استحکام رہا۔کاروبار کے لحاظ سے پاک الیکٹرون 3 کروڑ 8 لاکھ ، جہانگیر صدیقی کمپنی 2 کروڑ 50 لاکھ ،میپل لیف سیمنٹ ایک کروڑ 81 لاکھ،پاک انٹرنیشنل ایک کروڑ 78 لاکھ اوربینک آف خیبر ایک کروڑ 15 لاکھ حصص کے سودوں کے ساتھ سرفہرست رہے۔

Print Friendly, PDF & Email