ایچ بی ایل نے پہلی سہ ماہی کے نتائج کا اعلان دیا

ایچ بی ایل نے گزشتہ روزسال2015 کی پہلی سہ ماہی کے نتائج کا اعلان کیا
کراچی( بزنس ڈیسک)ایچ بی ایل نے گزشتہ روزسال2015 کی پہلی سہ ماہی کے نتائج کا اعلان کیا جو گزشتہ سال اسی دورانیے کے عرصے میں 10 بلین کے ریکارڈ پوسٹ ٹیکس منافع کی تقسیم کے ساتھ 63 فیصد گروتھ کی بدولت ممکن ہوئے ہیں۔ گزشتہ سال 2014 کی پہلی سہ ماہی کے 4.12 روپے کے مقابلے میں آمدنی میں فی شیئر 6.73 روپے کا اضافہ ہوا ، اس نتیجے کے ساتھ بورڈ نے سہ ماہی کیلئے فی شیئر 3.50 روپے منافع منقسمہ کا اعلان کیا ہے ، اس نمایاں کارکردگی کے باعث ریونیو کی شرح نمو 7 بلین روپے سے زیادہ رہی۔ نیٹ انٹرسٹ انکم میں19 بلین روپے سے زائد کا اضافہ ہوا۔ بینک کی اوسط بیلنس شیٹ میں 17 فیصد کی افزائش رہی۔ بینک کو کرنٹ اکاو¿نٹس کی بڑھتی ہوئی تعداد کی حد میں بھی کامیابی حاصل ہوئی جس میں سال بہ سال 23 فیصد سے بڑھ کر تقریباً 35 فیصد ٹوٹل ڈپازٹ کی گروتھ دیکھی گئی۔ سہ ماہی کے لیے نان مارک اپ آمدنی 44 فیصد سے بڑھ کر 7.8 بلین روپے ہوگئی۔ HBL تسلسل کے ساتھ ٹیکنالوجی ، ڈسٹری بیوشن اور افراد میں سرمایہ کاری کررہا ہے ،اسی طرح 100 سے زائد نئے ATMs اور 2,500 نئے POS ٹرمینلز نیٹ ورک میں شامل کیے گئے ہیں ، ان تمام انتظامی اخراجات کے باوجود سہ ماہی میں گروتھ 7.4 فیصدYoY رہی۔ HBL کی انویسٹمنٹ ڈلیورنگ ، اسٹرانگ بزنس گروتھ کے ساتھ کاسٹ / انکم کا تناسب گزشتہ سال 2014 کے پہلے کوارٹر میں 49.7 فیصد کے مقابلے میں 39.4 فیصد کم رہا۔ دسمبر 2014 میں مجموعی کیپٹل کی موزونیت کا تناسب دسمبر 2014 میں 16.2 فیصد سے بہتر ہو کر مارچ 2015 میں 16.7 فیصد ہوگیا ، جو کہ بینک کے سرمائے کی مضبوط و مستحکم حالت کو ظاہر کرتا ہے۔ 2014 کی پہلی سہ ماہی میں اثاثہ جات پر HBL کا منافع 1.4 فیصد سے بڑھ کر 2015 کی پہلی سہ ماہی میں 2.1 فیصد ہوگیا ہے جبکہ ایکویٹی پر منافع 26.7 فیصد بڑھ گیا۔

Print Friendly, PDF & Email