انڈیکس 35 ہزار پر پہنچ کر نیچے آگیا , کراچی اسٹاک کے سرمائے میں 33 ارب خسارہ

کراچی (بزنس رپورٹر)کراچی اسٹاک مارکیٹ میں بدھ کے روز انڈیکس35ہزار پوائنٹس کی انتہائی ریکارڈ سطح پر جاپہنچا لیکن کاروباری اتارچڑھاو¿ کے باعث مارکیٹ مندی کی زد میں آنے سے انڈیکس 34800 پوائنٹس سے گھٹ کر 34600پوائنٹس پرآگیا۔سرمائے کے حجم میں 33 ارب سے زائد روپے کی کمی ریکارڈ کی گئی تاہم کاروباری لین دین منگل کی نسبت 4 کروڑ حصص زائد رہا۔کراچی اسٹاک مارکیٹ میں کاروبار کے آغاز پر سرمایہ کاروں کی توانائی،سیمنٹ ،فرٹیلائزر سیکٹر میں دلچسپی برقراررہی اورمثبت مالیاتی نتائج کی توقعات پرمنافع بخش سیکٹر کے حصص کی خریداری بھی عروج پردیکھی گئی جس کے باعث ٹریڈنگ کے دوران کے ایس ای 100 انڈیکس 34900 اور35000 پوائنٹس کی 2 بالائی حدوں کوعبور کرتاہوا 35053 پوائنٹس کی ریکارڈ سطح پر جاپہنچا ،تاہم مقامی انسٹی ٹیوشنز اوربروکریج ہاو¿سز کی جانب سے منافع خوری کی خاطر باعث اسٹاکس میں حصص کے فروخت کے دباو¿ اورسرمائے کے انخلا کے باعث انڈیکس ریکارڈ سطح کر برقرارنہ رہ سکا جس کے باعث مارکیٹ منفی زون میں چلی گئی اورمندی کی یہ لہر کاروبار کے اختتام تک برقراررہی۔انویسٹرز کے مطابق اس وقت مارکیٹ35ہزار پوائنٹس کے قریب ہے اور تکنیکی کریکشن کا شکار ہے۔ مالیاتی نتائج مارکیٹ کی کارکردگی پر اثر انداز ہوں گے ، بدھ کوکاروبار کے اختتام پر کے ایس ای 100 انڈیکس میں 154.26 پوائنٹس کی کمی ریکارڈ کی گئی جس سے 100 انڈیکس 34826.51 پوائنٹس سے کم ہوکر 34672.25 پوائنٹس پربند ہوا، اسی طرح 121.09 پوائنٹس کی کمی سے کے ایس ای 30 انڈیکس 22493.04پوائنٹس اورکے ایس ای آل شیئرز انڈیکس138پوائنٹس کمی سے 25031.12 پوائنٹس سے گھٹ کر 24924.33پر بند ہوا۔ بدھ کو مندی کے باعث مارکیٹ کے سرمائے میں 33 ارب 71 کروڑ59 لاکھ 8 ہزار 579 روپے کی کمی ریکارڈ کی گئی جس کے نتیجے میں مارکیٹ کا مجموعی سرمایہ 78 کھرب 96 ارب 82 کروڑ 36 لاکھ 12 ہزار 413 روپے سے کم ہوکر 78 کھرب، 63ارب 10 کروڑ 77 لاکھ 3 ہزار 834 روپے ہوگیا۔بدھ کو مارکیٹ میں 38 کروڑ 25 لاکھ 61 ہزار حصص کاکاروبار ہوا اورٹریڈنگ ویلیو 21 ارب روپے ریکارڈ کی گئی جبکہ منگل کو 34 کروڑ 42 لاکھ 79 ہزار حصص کاکاروبار ہواتھا اورٹریڈنگ ویلیو 20 ارب روپے تک محدودرہی تھی۔کراچی اسٹاک مارکیٹ میں بدھ کے روز مجموعی طور پر 387 کمپنیوں کا کاروبار ہوا جس میں سے 131 کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ ،236 میں کمی اور 20 کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں استحکام رہا۔کاروبار کے لحاظ سے پاک الیکٹرون 3 کروڑ 64 لاکھ، پاک انٹرنیشنل بلک 3 کروڑ 30 لاکھ ، جہانگیر صدیقی کمپنی 2 کروڑ 74 لاکھ، کے الیکٹرک لمیٹڈ 2 کروڑ 17 لاکھ اور پکک گروتھ ایک کروڑ 99 لاکھ حصص کے سودوں سے سرفہرست رہے۔ قیمتوں میں اتارچڑھاو¿ کے اعتبار سے نیسلے پاک کے بھاو¿ میں 100روپے اور ایکسائیڈ پاک کے بھاو¿ میں 21.79 روپے کااضافہ ہوا۔

Print Friendly, PDF & Email